سنا تھا ٹوٹ کے

سنا تھا ٹوٹ کے جڑنا بہت مضبوط کرتا ہے
سو ریزہ ریزہ کر بیٹھا اسی امید پہ خود کو

Leave a Reply