جب وہ اِک شخص دسترس میں تھا
اس سے ملنا تمہارے بس میں تھا
اس کی آنکھیں تمہاری آنکھیں تھیں
اس کی باتیں تمہاری باتیں تھیں
اس کا چہرہ تمہارا چہرہ تھا
اس کے دل پر تمہارا پہرہ تھا
اس کی ہر سانس میں بسی تھیں تم
اس کے ہر لفظ میں کِھلی تھیں تم
اس کے سپنوں میں بھی رچی تھیں تم
اس کی نیندوں میں جاگتی تھیں تم
وہ جو کہتا تھا بے قراری ہے
میری ساری وفا تمہاری ہے
صرف تم سے مجھے محبت ہے
صرف تم سے میری حقیقت ہے
کتنی باتیں میں کہہ نہیں سکتا
دور تم سے میں رہ نہیں سکتا
تب تم اس کے ہر ایک جملے کو
تب تم اس کے ہر ایک جذبے کو
اِک ہنسی میں اڑایا کرتی تھیں
سن کے تم بھول جایا کرتیں تھیں
اس کی آنکھوں کو دیکھتیں جب وہ
بے نیازی کے درد سہتا تھا
بھول جانا تمہاری عادت تھی
پھر بھی کتنا ملول رہتا تھا
اپنی تنہائی کے گلے لگ کر
سارے آنسو وہ رو گیا اک دن
ایک پتھر سے دل لگی کر کے
خود بھی پتھر کا ہو گیا اک دن
اب وہ تم سے تو کچھ نہیں کہتا
بے نیازی کے دکھ نہیں سہتا
اس کی آنکھیں اب اس کی آنکھیں ہیں
اس کی باتیں اب اس کی باتیں ہیں
بھول جانا تمہاری عادت ہے
اس کی باتوں کو بھول جاؤ نا
اب وہ اِک شخص دسترس میں نہیں
اس سے ملنا تمہارے بس میں نہیں
کس لیے اب اداس بیٹھی ہو؟؟؟

Suno Jana
Judai Maut Hoti Hai!

kabhi fursat mile tu daikhna patton ka girna tum,
k jab yeh shajar se gir k zameen par aan partey hain tu kaise raunde jate hain.
thirthrati raat k khamosh lamhon mein,

kisi bebas akeli bawafa khamosh ladki ki kabi tum siskian sunna,
kabi qitaar se bichri hui koonjon k noohe par nigah karna,
k kaise aik dooje ki judai par tarap kar bain karte hain,
kabi rukhsat k lamhon mein kisi ki ankh se larkhartey huwey ansoo ko daikho gi,
tu shaid jaan jao gi,
judai maut hoti hai,

Abi tum ne muhabbat k baraste bheegte mausam nahi daikhe,
abi tum titliun k rang muthi main chupati ho,

abi tum muskarati ho
suno jana !
kabhi jo zindagi ne ajnabi veran rahon par,

tumhare yeh hansi cheene,
tu phir ansoo bahao gi,
tum itna jaan jao gi…